Back

ⓘ سیاحت - سیاحت, بھارت میں سیاحت, ماحولیاتی سیاحت, پاکستان میں سیاحت, عالمی سیاحت تنظیم, آزاد کشمیر میں سیاحت, تلنگانہ میں سیاحت, عالمی یوم سیاحت, وادی نئیگ ..




                                               

سیاحت

سیاحت تفریحی، فرحت بخشانہ،صحت افزائی، اطمینان بخشی یا قدرتی نظاروں کو دیکھنے کے مقاصد کے لیے سفر ہے۔2011 میں سیاحت ایک مقبول عالمی تفریحی سرگرمی بن چکی ہے۔ ورلڈ ٹورازم آرگنائزیشن یہ پیش‌گوئی کرتا ہے کہ ایک سے دوسرے مُلک سفر کرنے والے لوگوں کی تعداد1997ء میں 631 ملین سے سنہ 2020ء تک 1 اعشاریہ 6 بلین تک بڑھ جائیگی۔ جس میں تاحال کوئی کمی نظر نہیں آتی۔ طلب کی اس افزائش کی وجہ سے کاروبار، تفریح‌گاہوں اور سیاحوں کے لیے خدمات فراہم کرنے والے ممالک کی تعداد میں افزائش کی گئی تھی۔ سیاحت نہ صرف سیر و تفریح اور صحت افزائی کے لیے مفید ہے بلکہ سیاحت سے مقامی آبادی اور اس ملک کے اقتصاد کو تقویت ملتی ہے۔ ...

                                               

بھارت میں سیاحت

سیاحت بھارتی اقتصاد کا ایک اہم جز ہے۔ عالمی تنظیم ورلڈ ٹریول اینڈ ٹورازم کونسل کے مطابق بھارت میں سیاحت سے بھارتی قومی خزانے کو 8.31 لاکھ کروڑ روپیہ کا فائدہ ہوا۔ سیاحت سے 37 ملین سے بھی زائد لوگوں کو کام کے مواقع فراہم ہوئے۔ سالانہ سیاحت کا شعبہ متوسط 7 اعشاریہ 5 فیصد ترقی کرتا رہا ہے۔ بھارت کی خالص قومی پیداوار میں اندازہ لگایا گیا ہے کہ 2025ء تک سیاحت کی وجہ سے سرکاری خزانے کو 270 بلین امریکی ڈالر کا فائدہ پہنچے گا۔ اس کے علاوہ 2014ء میں 184.298 لوگوں نے علاج کے لیے بھارت کا رخ کیا۔ اپریل 2016ء میں غیر ملکی سیاحوں کی آمد میں سال 2015ء کے مقابلے 10.7 فیصد کا اِضافہ ہوا۔ غیر ملکی سیاحوں ک ...

                                               

ماحولیاتی سیاحت

ماحولیاتی سیاحت یا ماحول دوست سیاحت کی دنیا کی ایک نئی اصطلاح ہے۔ اسے 1983ء میں ہیکٹر کیبالوس لاسکورین نے وضع کیا۔ اسے قدرت پر مبنی ایسی سیاحت کو بیان کرنے کے لیے ہوتا ہے جس میں تعلیم، دیرپا رہنے والے سیاحتی مصنوعات اور کارروائیوں پر خصوصی توجہ دی جاتی ہے۔ عالمی سیاحتی ادارے نے اس کی تعریف یوں کی ہے:

                                               

پاکستان میں سیاحت

پاکستان ایک ایسا ملک ہے جس کو اللہ تعالی نے متنوع جغرافیہ اور انواع و اقسام کی آب و ہوا دی ہے۔ پاکستان میں مختلف لوگ،مختلف زبانیں اور علاقیں ہیں جو پاکستان کو بہت سے رنگوں کا گھر بنا دیتے ہیں۔ پاکستان میں ریگستان،سرسبز و شاداب علاقے،میدان،پہاڑ، جنگلات،سرداور گرم علاقے،خوبصورت جھیلیں،جزائر اور بہت کچھ ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ سال 2012 میں پاکستان نے اپنے طرف 1 ملین سیاحوں کو مائل کیا۔ امن و امان کے مسئلے کے وجہ سے پاکستان کی سیاحت بہت متاثر ہوئی لیکن اب حالات بڑی حد تک معمول پر آچکے ہیں اور اچھی خاصی تعداد میں لوگوں نے پاکستان کا رُخ کیا ہے۔ پاکستان میں سیاحت کو سب سے زیادہ فروغ 1970ء کی دہائی می ...

                                               

عالمی سیاحت تنظیم

عالمی سیاحت تنظیم اقوام متحدہ کا خصوصی ادارہ ہےجس کا مقصد سیاحوں کی آمد و رفت کی ترقی کے لیے اقدامات کرنا ہے تاکہ بین الاقوامی تعلقات کو فروغ حاصل ہو، مختلف ممالک کے درمیان سیاحوں کی آمد و رفت سے ملکوں کے درمیان ہم آہنگی اور استحکام پیدا ہو سکےاور اس طرح معاشی اور سماجی زندگی میں ترقی ہو سکے۔ یہ ادارہ رکن ممالک کے درمیان آزادانہ آمد و رفت کا انتظام کرتا ہے۔ سیاحت کے متعلق قواعد و ضوابط اور معقول طریقوں کا بند و بست کرتا ہے، نیز یہ ادارہ رکن ممالک کی معاشی و سماجی زندگی میں تعاون کے ذرائع بھی فراہم کرتا ہے۔ اس وقت 158 مملک اس ادارے کے رکن ہیں۔ اس کا صدر دفتر اسپین کے دار الحکومت میڈرڈ میں ق ...

                                               

آزاد کشمیر میں سیاحت

کشمیر جو پاکستان کے شمالی حصے میں واقع ہے،پاکستان کے خوبصورت ترین خطوں میں سے ایک ہے۔ آزاد کشمیر زیادہ تر سرسبز وادیوں اور پہاڑوں پر مشتمل ہے اور قدرت نے خطے کو ہر قسم کے نظارے بخشے ہیں۔ کشمیر اپنی قدرتی خوبصورتی اور دلکش مناظر کی وجہ سے جانا جاتا ہے اور سیر و تفریح کے لیے لوگ بڑی تعداد میں آزاد کشمیر کا رُخ کرتے ہیں۔ اسی خوبصورت مناظر کی وجہ سے مغل شہنشاہ،اورنگزیب عالمگیر نے کہا تھا کہ کشمیر زمین پر جنت ہے۔ آزاد کشمیر میں 10 اضلاع، 19 تحصیلیں اور 182 یونین کونسلیں ہیں، آزاد کشمیر میں ضلع باغ، ضلع بھمبر، ضلع پونچھ، ضلع سدھنوتی، ضلع کوٹلی، ضلع مظفر آباد، ضلع میر پور، ضلع نیلم، ضلع حویلی اور ...

                                               

تلنگانہ میں سیاحت

تلنگانہ کا شعبہ سیاحت: TelanganaTourism Sector: سیاحت بہت سے مواقع فراہم کرنے والی ایک صنعت ہے جو ریاست کی سماجی اور معاشی ترقی میں اہم رول ادا کرتی ہے۔ تلنگانہ ریاست میں بھی کئی سیاحتی مراکز ہیں۔ جہاں دنیا بھر سے سیاح آتے ہیں۔ حید رآباد ملک کے ان چند بڑے شہروں میں شمار ہوتا ہے جو سیاحوں کو اپنی جانب راغب کرتا ہے۔ دنیا بھر میں مشہور چارمینار یہیں واقع ہے۔ اور حیدرآباد کو دنیاکے 20بہترین شہروں میں سے دوسرا درجہ حاصل ہواہے۔ ریاست تلنگانہ کا سیاحتی محکمہ تلنگانہ اسٹیٹ ٹورازم ڈپارٹمنٹ ایک سرکاری ادارہ ہے جو تلنگانہ میں سیاحت کو فروغ دیتا ہے۔ تلنگانہ میں سیاحت کے بہت امکانات ہیں۔ ریاست تلنگانہ ...

                                               

عالمی یوم سیاحت

سیاحت کا عالمی دن دنیا بھر میں 27 ستمبر کو منا یا جاتا ہے، سیاحت کا یہ عالمی دن ورلڈ ٹورازم آرگنائزیشن کی ایگزیکٹیو کونسل کی سفارشات پر اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کی قرارداد کے مطابق 1970ء سے منایا جا رہا ہے۔ یہ دن منانے کا مقصد دنیا کو یہ باور کرانا ہے کہ سیاحت بین الا قومی برادری کے لیے ناگز یر ہے اور سیاحت سماجی، ثقافتی اور اقتصادی حالات پر براہ راست اثر اندا ز ہوتی ہے۔

                                               

شندور پولو فیسٹیول

{{Infobox body of water |name = شندور پولو فیسٹیول شندور پولو فیسٹیول گلگت بلتستان اور خیبر پختونخوا کے ضلع چترال کا مشترکہ میلہ ہے جو ہر سال 7 سے 9 جولائی تک منایا جاتا ہے۔ یہ میلہ دنیا کے بلند ترین پولو گراونڈ شندور میں منایا جاتا ہے۔ اس میلے میں چترال اور غذر گلگت بلتستان سے پولو کے مائہ ناز کھلاڑی شرکت کرتے ہیں۔

                                               

قصہ خوانی بازار

قصہ خوانی بازار پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا میں پشاور کا ایک مشہور تاریخی بازار ہے۔ قصہ خوانی بازار تاریخی لحاظ سے ادبی اور سیاسی مرکز کی حیثیت رکھتا ہے۔ اس بازار کا نام دراصل یہاں کے روایتی قہوہ خانوں، تکہ کباب، چپلی کباب اور خشک میوہ جات کی دکانوں کے ساتھ جڑی اس تجارت سے منسوب ہے جہاں پہلے پہل دور دراز سے آئے تاجر یہاں کے مہمان خانوں میں قیام کرتے اور اپنے ملکوں کے حالات قصہ کی شکل میں بیاں کرتے۔ یہاں کے قصہ گو پورے علاقہ میں مشہور تھے۔ یہاں تاجروں کے علاوہ قافلوں کا بھی پڑاؤ ہوتا اور فوجی مہمات کا آغاز اور پھر اختتام جو تفصیلاً ہر مہم کے احوال کے ساتھ یہیں ہوا کرتا تھا۔ یہاں کے پیشہ و ...

                                               

وادی نئیگ

وادی نئیگ انگریزی سندھ پاکستان میں کھیرتھر پہاڑی سلسلی میں ایک وادی ہے۔ وادی میں بارانی نالے نئیگ سے وادی نئیگ اورنئیگ شریف گائوں پر نام پڑا۔ وادی نئیگ بھت پہاڑ اور بڈو پہاڑ میں ہے۔ وادی نئیگ ضلع جامشورو کے شہر سیہون شریف سے 45 کلومیٹر کے فاصلے پر جنوب مغرب میں واقع ہے۔ یہاں کھجوراور پیپل کے علاوہ دوسرے درخت بھی ہیں جس کی وجہ سے وادی سرسبز اور خوبصورت نظر آتی ہے۔ وادی میں چار قدیم آثار ہیں، لکھمیر ٹیلہ، بدھ مت کا سٹوپ، مائی روہی اور پیر سید قمبر علی شاہ کا مزار۔ این جی مجمدار کے مطابق لکھمیر ٹیلہ کیلکولیتھک دور کا ہے۔ اس وادی سے صوفیوں اور جوگیوں کا قدیم راستہ لاہوت لامکاں اور ہنگلاج تک جا ...

                                               

پپراسر آبشار

پپراسر آبشار پاکستان کے صوبہ سندھ کے ضلع دادو کی تحصیل جوہی کے تاریخی شہر واہی پاندھی کے قریب گورکھ ہل کے راستے کے مغرب میں کھیرتھر پہاڑی سلسلے میں نلی یا نری نامی بارانی نالے یا نئے کے بہاء کے قریب تر ہے۔

                                               

پاکستان میں طبی سیاحت

طبی سیاحت بھی سیاحت کا ایک جز ہے۔ طبی سیاحت سے مراد وہ سیاحت جس میں ایک شخص کسی ایک ملک سے دورسرے ملک کسی بیماری کا علاج کرنے جائے۔ عموماََ صرف ان ممالک سے لوگ دوسرے ملک علاج کے لیے جاتے ہیں جہاں پر طب کے شعبے میں ترقی نہ ہوئی ہو۔ طبی ماہرین کے مطابق پاکستان ان چند خوش نصیب ممالک میں سے ہے جو سیاحت کا مرکز بن سکتا ہے اگر اس پر حکومت اور عوام توجہ دے اور اس پر کام کریں۔ پاکستان میں بڑے جنگلات موجود ہیں جہاں سے ہر قسم کی طبی امداد حاصل کی جاسکتی ہے۔

                                               

طبی سیاحت

طبی سیاحت یا علاج سیاحت بھی سیاحت کا ایک جز ہے۔ طبی سیاحت سے مراد وہ سیاحت جس میں ایک شخص کسی ایک ملک سے دورسرے ملک کسی بیماری کا علاج کرنے جائے۔ عموماََ صرف ان ممالک سے لوگ دوسرے ملک علاج کے لیے جاتے ہیں جہاں پر طب کے شعبے میں ترقی نہ ہوئی ہو ۔

وزارت سیاحت پاکستان
                                               

وزارت سیاحت پاکستان

وزارتِ سیاحت پاکستان میں سیاحت کو فروغ دینے کے لیے قائم کی گئی وزارت کو کہا جاتا ہے۔ وزارت سیاحت حکومت پاکستان کا حصہ ہوتا تھا لیکن اٹھارویں آئینی ترمیم کے بعد وزارتِ سیاحت کو ختم کیا گیا اور تمام اہم اختیارات پاکستان ٹورزم ڈیولپمنٹ کارپوریشن کو منتقل کیے گئے۔

وادی پلیماس
                                               

وادی پلیماس

وادی پلیماس انگریزی پہاڑی سلسلے میں وادی ہے جو وڈھ شہر کے مشرق میں تحصیل وڈھ، ضلع خضدار، بلوچستان، پاکستان میں واقع ہے۔ پہاڑوں سے بہتے ہوئے کُنج اور دوسرے بارانی نالے وادی پلیماس کی طرف آتے ہیں۔ اس وادی کے قریب پہاڑوں میں قدیم تحریریں اور تھریہ غار نقش نگاری کے قدیم ترین آثار ملے ہیں۔ وادی پلیماس میں بہت سے تاریخی اور قدیم آثار ہیں جو بلوچستان کی نال تہذیب کے دور کے ہو سکتے ہیں۔وادی پلیماس میں قِلی چٹوکہ بھٹ اور قِلی جمع خان مینگل اہم گائوں ہیں۔ یہ بہت سرسبز وادی ہے۔