Back

ⓘ آشا, 1980 فلم. آشا 1980 کی ہندوستانی ہندی زبان کی ڈراما فلم ہے ، جسے جے اوم پرکاش نے فلم یوگ پرائیوٹ لمیٹڈ کے تحت تیار کیا اور ہدایتکاری کے فرائض انجام دیے۔ اس ..




                                     

ⓘ آشا (1980 فلم)

آشا 1980 کی ہندوستانی ہندی زبان کی ڈراما فلم ہے ، جسے جے اوم پرکاش نے فلم یوگ پرائیوٹ لمیٹڈ کے تحت تیار کیا اور ہدایتکاری کے فرائض انجام دیے۔ اس فلم کے ستاروں میں جتندر ، رینا رائے ،رمیشوری شامل تھے اور موسیقی لکشمی کانت پیارے لال نے ترتیب دی تھی۔ فلم باکس آفس پر "کھڑکی توڑ" مقبولیت سے ہم کنار ہوئی۔ تیلگو میں اس فلم کو انوراگ دیواتھا ، تمل میں سمنگلی اور بنگالی میں منڈیرا نے دوبارہ بنایا ۔

کئی سالوں کے دوران یہ فلم کلاسیک کا درجہ حاصل کر چکی ہے۔ ڈائریکٹر جے اوم پرکاش نے آشا 1980 میں اپنے پوتے ہریتک روشن کو پہلی دفعہ بڑی اسکرین پر پیش کیا۔

                                     

1. پلاٹ

دیپک جتندر ایک ٹرک ڈرائیور ہے جو ایک مشہور گلوکارہ آشا رینا رائے کو اس وقت لفٹ دیتا ہے جب اس کی گاڑی ٹوٹ جاتی ہے، دونوں دوست بن جاتے ہیں۔ دیپک کو پہلے ہی مالا رامشوری سے پیار ہے ، جس سے اس کی شادی ہوتی ہے۔ آشا اس کی خواہش رکھتی ہے مگر اسے بظاہر دوست ہی کہتی ہے حالانکہ اسے اس سے پیار ہو گیا ہے۔

دیپک کا ایک حادثہ ہو جاتا ہے ،اور ہر ایک کو یقین ہے کہ وہ مر گیا ہے۔ اس کی غمزدہ ماں حاملہ مالا سے کہتی ہے کہ وہ چلی جائے۔ مالا اپنے والد کے پاس گھرجاتی ہے لیکن وہ مر جاتا ہے۔ پریشان حال مالا ایک پل سے پانی میں چھلانگ لگا نے کی کوشش کرتی ہے۔ ومندر سے وابستہ کچھ افراد اسے بچا لیتے ہیں۔ وہ ایک بیٹی کو جنم دیتی ہے اور اس کا نام دیپ مالا رکھتی ہے۔

دیپک ابھی زندہ ہے۔ جب وہ گھر آتا ہے تو اس کی ماں بہت خوش ہوتی ہے۔ وہ اسے مالا کی خود کشی کے بارے میں بتاتی ہے جس سے وہ افسردہ ہوجاتا ہے۔

آشا دیپک کی زندگی میں دوبارہ داخل ہوتی ہے اور اس کو افسردگی پر قابو پانے میں اس کی مدد کرتی ہے۔ اس کے بعد ان کی منگنی ہوجاتی ہے اور وہ دیپ مالا سے بھی واقف ہوجاتے ہیں ، جو اب ایک چھوٹی سی لڑکی ہے ، جو سڑک پربھگوان کے چھوٹے مجسمے بیچتی ہے۔

آشا مالا سے ملتی ہے اور اس کی آنکھوں کے آپریشن کےلیے ادائیگی کرنے کی پیش کش کرتی ہے ، تاکہ وہ دوبارہ بینائی حاصل کر سکے۔ وہ اسے اور دیپ مالا کو بھی شادی کی دعوت دیتی ہے۔

مالا اپنی نظر دوبارہ حاصل کرلیتی ہے اور آشا کی شادی پر جاتی۔ دیپک کو دیکھ کر وہ چونک اٹھتی ہے اور فوراََ وہاں سے چلی جاتی ہےتاکہ آشا اور دیپک کی زندگی کومتاثر نہ کرے۔ تاہم مالا کا خاموش مداح گیریش کرناڈ دیپک سے کہتا ہے کہ مالا زندہ ہے اور دیپ مالا ان کی بیٹی ہے۔

آشا شادی منسوخ کردیتی ہے ، دیپک سے کہتی ہے کہ وہ اپنی بیوی اور بیٹی کے ساتھ دوبارہ ملے اور ان کے ساتھ ہی رہے۔ فلم کے آخر میں آشا اپنا مشہور گانا "شیشہ ہو یا دل ہو ، آخر ٹوٹ جاتا ہے" گاتی ہے اور اسٹیج پر واپس چلی جاتی ہے۔

                                     

2. فلم فیئر نامزدگیاں

  • بہترین معاون اداکار - گیریش کرناڈ
  • بہترین کہانی - رام کالکر
  • بہترین ڈائریکٹر - جے اوم پرکاش
  • بہترین موسیقی - لکشمی کانت پیارے لال
  • بہترین معاون اداکارہ - رامیشوری
  • بہترین اداکارہ - رینا رائے
  • بہترین فلم - 1980
  • بہترین گیت نگار - گانا "شیشہ ہو یا دل ہو" کے لیے آنند بخشی