Back

ⓘ آسمان محل, فلم. آسمان محل سنہ 1965ء کی ایک سماجی فلم ہے جو خواجہ احمد عباس کی ہدایت کاری اور نیا سنسار نامی کمپنی کے بینر تلے منظر عام پر آئی۔ فلم کی کہانی خواج ..




                                     

ⓘ آسمان محل (فلم)

آسمان محل سنہ 1965ء کی ایک سماجی فلم ہے جو خواجہ احمد عباس کی ہدایت کاری اور "نیا سنسار" نامی کمپنی کے بینر تلے منظر عام پر آئی۔ فلم کی کہانی خواجہ عباس نے لکھی، رام چندر نے اسے سینما کی اسکرپٹ میں منتقل کیا اور اندر راج آنند نے مکالمے مرتب کیے۔ ایک تصوراتی نواب کے کردار میں پرتھوی راج کپور فلم کی کامیابی کی ضمانت تھے۔ دلپ راج نے ہیرو کا کردار نبھایا جو اس سے قبل شہر اور سپنا میں بھی اپنی اداکاری کے جوہر دکھا چکے تھے۔ سریکھا، ڈیوڈ، نانا پالسکر اور انور حسین نے دوسرے کردار نبھائے۔

فلم میں حیدرآباد کے ایک ایسے نواب کی کہانی بیان کی گئی ہے جس کے پاس سرمایہ ختم ہو چکا ہے لیکن وہ اب بھی اپنا آبائی اور روایتی طرز زندگی اور نوابی ٹھاٹھ برقرار رکھنا چاہتا ہے جبکہ اس کا لڑکا نواب زادہ سلیم اس غیر حقیقی طرز زندگی کی مخالفت کرتا ہے۔

                                     

1. کہانی

حیدرآباد کے نواب آسمان الدولہ اپنی آبائی حویلی آسمان محل میں رہتے ہیں۔ اسی اثنا میں ایک شخص دس لاکھ روپوں کے عوض ان کی اس حویلی کو خریدنے کے لیے آتا ہے تاکہ وہ اسے ہوٹل میں تبدیل کرے۔ گرچہ نواب صاحب بڑی عسرت کی زندگی بسر کر رہے ہیں لیکن انہیں اپنی آبائی حویلی اور شرافت کی آخری یادگار یوں فروخت کر دینا گورا نہیں، نیز تنگی کے زمانے میں بھی وہ اپنی قدیم نوابی وضع برقرار رکھنے پر مصر ہیں۔ ان کا فرزند سلیم گوکہ انتہائی نکما ہے لیکن اس غیر حقیقی طرز زندگی سے سخت بیزار ہے۔ اور اسے اپنی حویلی کے ایک خادم کی لڑکی سے عشق ہے۔