Back

ⓘ سلم السماء یا رسالہ الکمالیہ فارسی النسل ماہر فلکیات غیاث الدین مسعود جمشید کاشانی کی تصنیف ہے جس میں فلکیات اور نظام شمسی میں موجود اجرامِ فلکی پر بحث کی گئی ہ ..




سلم السماء
                                     

ⓘ سلم السماء

سلم السماء یا رسالہ الکمالیہ فارسی النسل ماہر فلکیات غیاث الدین مسعود جمشید کاشانی کی تصنیف ہے جس میں فلکیات اور نظام شمسی میں موجود اجرامِ فلکی پر بحث کی گئی ہے۔ یہ کتاب پندرہویں صدی عیسوی کے پہلے عشرے میں لکھی گئی۔

                                     

1. جائزہ متن

کتاب کا نام سُلَم السماء ہے جس کا معنی ہے کہ آسمان پر چڑھنے کے لیے سیڑھی۔ کتاب عربی زبان میں تحریر کی گئی ہے اور اِس کا اختتام بروز منگل 21 رمضان 809ھ/ یکم مارچ 1407ء کو ہوا۔ مصنف غیاث الدین مسعود جمشید کاشانی نے اپنی ایک دوسری تصنیف کے دیباچہ میں اِس کتاب کا نام مفتاح الحساب لکھا ہے۔ کتاب میں قدیمی اور قرون وسطی کے زمانے کے علم فلکیات کا اندراج بھی کیا گیا ہے۔ کتاب کے متن سے معلوم ہوتا ہے کہ اِس میں سابقہ فلکیاتی کتب کا مواد اخذ کیا گیا ہے۔ عطارد، چاند، سورج اور اجرام فلکی کے وزن و حجم کا تعین بھی کیا گیا ہے۔

                                     
  • ہیں کہ : وفي أخبار قومنا إن اللہ يبعث المهدي ويخرج الدجال وينزل عيسى من السماء وكل ذلك في نفسي بعيد من الصواب ومعي إن الخضر ميت وعيسى كذلك یعنی ہماری
  • کے پاس سے گزرتے ہوئے یہ جملات کہے: یا محمداہ یا محمداہ صلی علیک ملائکة السماء ہذا الحسین بالعراء مرمل بالدماء مقطع الأعضاء یا محمداہ و بناتک سبایا
  • 11142 واہنڈو 11143 واہی بہاول شاہ 11144 واہی حسین 11145 وتد الارض 11146 وتد السماء 11147 وتد الغرب 11148 وتہ خیل 569 جی بی 11149 وثائق Archive 11150 وثق