Back

ⓘ علوم فطریہ. علم فطریہ ، علوم فطریہ یا natural science اصل میں فطری قواعد کو بنیاد بناتے ہوئے کائنات کے منطقی مطالعہ کو کہا جاتا ہے۔ اس اصطلاح کے استعمال سے ان م ..




علوم فطریہ
                                     

ⓘ علوم فطریہ

علم فطریہ ، علوم فطریہ یا natural science اصل میں فطری قواعد کو بنیاد بناتے ہوئے کائنات کے منطقی مطالعہ کو کہا جاتا ہے۔ اس اصطلاح کے استعمال سے ان معاشرتی علوم کو علاحدہ شناخت کرنا بھی ایک مقصد ہے جن میں فطرت کے مطالعہ کے لیے علمی طریقہ کار استعمال کیے جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ وہ علوم بھی اس سے الگ شمار کیے جاتے ہیں جو انسانی سلوک ، قیاسی علوم ، ریاضیات اور منطق سے متعلق ہوتے ہیں اور اپنی ایک علاحدہ methodology رکھتے ہیں۔

فطری علوم سے نفاذی علوم کی بنیادیں فراھم ہوتی ہیں۔ اور یہ دونوں دیگر ملتے جلتے طریقہ کار رکھنے والے علوم مثلا معاشرتی علوم، انسانیات، الہیات اور فنون سے الگ اپنی شناخت رکھتے ہیں۔ ریاضی، احصاء اور علم کمپیوٹر کو فطری علوم میں شمار نہیں کیا جاتا لیکن یہ علم ان تینوں علوم میں استعمال کیے جانے والے متعدد طریقہ کار کے لیے ڈھانچہ فراہم کرتا ہے۔

                                     
  • علم طبعی علم طبیعی یا علوم طبیعیہ انگریزی: physical science علوم فطریہ Natural science کی ایک شاخ ہے جس میں فطری قوانین اور بے جان مادے کے خواص
  • وہ علوم شامل ہوتے ہیں جو زیادہ تر تجریدی شکل رکھتے ہیں مثلا منطق ریاضی علم کمپیوٹر کی نظریاتی شاخیں نظریہ اطلاعات اور احصاء نفاذی علوم علوم فطریہ
  • رجوع مکرر علوم فطریہ
  • ہے کہ جو ایک یا ایک سے زائد سائنسی شعبہ جات کی معلومات کو عملی طور پر کسی شعبہ زندگی کے مسائل حل کرنے کی خاطر نـافـذ کی جاتی ہے قیاسی علوم علوم فطریہ
  • جامعہ کی ایک قسم ہے جو انجینئری ٹیکنالوجی اطلاقی علم اور بعض اوقات علوم فطریہ کے لیے مخصوص ہوتی ہے Fitch Joshua Girling Garnett William 1911ء
  • Engineering شعبہ آلاتی ہندسیات Faculty of Mechanical Engineering شعبہ علوم فطریہ بشریات اور اسلامیات Faculty of Natural Sciences, Humanities and Islamic
  • ہائیڈل برک آسٹریا کے ایک مستشرق تھے انہوں نے یونیورسٹی آف وینا سے طب علوم فطریہ اور استشراق کی تعلیم حاصل کی 1836ء میں وہ لندن گئے جہاں انہوں نے ایری
  • کی نمائندگی کرتا ہے جو یکاترین برگ کی سرپرستی ہے تینوں کتابیں علوم فطریہ تشکیلی علوم اور انسانیت کے اتحاد کی علامت ہیں اور اس نشان کے نعرے کا حوالہ
  • تمام سائنسی علوم سے ہوتا ہے یہ بحث تو سائنسی علوم کے دو بڑے زمروں میں سے علوم فطریہ کے متعلق تھی جبکہ معاشرتی یا سماجی علوم بھی سائنسی علوم کا دوسرا بڑازمرہ
  • اور علوم فطریہ natural sciences کہلائے جاتے ہیں اور دوسرے وہ کہ جو انسانی سلوک human behavior اور معاشرے سے تعلق رکھتے ہیں اور معاشرتی علوم social
  • فلسفہ کا ہی حصہ تھا جو بعد میں فطری فلسفہ کہلانے لگا بعد ازاں اس کو علوم فطریہ کہا جاتا رہا حت ی کہ طبیعیات کا جدید تصور رائج ہو گیا فطری فلسفہ کی ابتدا
  • کرلی اور یونانی علم سے پودوں کی دنیا کے بارے میں بہت کچھ سیکھ لیا طبعی علوم کع بارے میں اس کا شوق اور بڑھ گیا یونانی علم اپنے وطن یونان لوٹنے سے پہلے