Back

ⓘ زمین. اگر آپ کسی اور صفحہ کی تلاش میں ہیں تو دیکھیں زمین زمین نظام شمسی کا وہ واحد سیارہ ہے جہاں پر زندگی موجود ہے۔ پانی زمین کی 3­ ­2 سطح کو ڈھکے ہوئے ہے۔ زمی ..



                                               

افق حقیقی

                                               

کیا زمیں گھومتی ہے

                                               

معدنیات کی تعریف

                                               

قصبہ ادری اور حافظ ملت

قصبہ ادری ہندوستان کے صوبہ اترپردیش کے ضلع مئو کا ایک قصبہ ہے۔ جو شہر مئو ناتھ بھنجن سے تقریبا آٹھ کلو میٹر مشرق - شمال کی جانب آباد ہے۔ ضلع مئو کا عالمی شہرت یافتہ قصبہ مدینة العلماء گھوسی قصبہ ادری سے چند کلو میٹر دور مغرب - شمال کی جانب واقع ہے۔ اس میں کوئی دو رائے نہیں کہ یہ قصبہ صدیوں پہلے سے آباد ہے۔ لیکن یہ قصبہ کب آباد ہوا؟ اس کا مؤسس اول کون ہے؟ اس کا جواب نہ ہی تاریخ ہند کے صفحات میں ملتا ہے اور نہ ہی کسی مستند دستاویز کے ذریعے سے۔ البتہ شیخ الحدیث علامہ ڈاکٹر عاصم اعظمی صاحب حفظہ اللہ کی لکھی کتاب "حضرت مولانا مفتی مجیب الاسلام نسیم اعظمی کے احوال و افکار" کے مقدمہ سے اتنا ضرور ...

                                               

تعجب

تعجب یا چونکنا ایک دماغی اور جسمانی کیفیت ہے جو اکثر انسانوں اور جانوروں میں کسی غیر متوقع واقعے کے نتیجے میں ہوتا ہے۔ چونکنے کی شدت مختلف ہو سکتی ہے: یعنی یہ غیر جذباتی / معتدل چونکنا ہو سکتا ہے، اداسی چھاتے ہوئے چونکنا ہو سکتا ہے، کبھی یہ کسی خوش خبری کی وجہ سے ہو سکتا ہے۔ اس طرح یہ منفی، مثبت یا غیر جانب دارانہ جذبہ ہو سکتا ہے۔ تعجب کی اثر انگیزی بھی حسب موقع جدا گانہ ہو سکتی ہے، جیسے کہ بہت ہی زیادہ تعجب، جس میں یا تو کوئی شخص خوشی سے پاگل ہو سکتا ہے، انتہائی جنگ جویانہ فطرت کا مظاہرہ کر سکتا ہے یا ماحول سے وہ دور بڑی تیزی سے جانے کی کوشش کرتا ہے۔ کچھ مواقع پر لوگوں میں تعجب کم ہوتا ہے ...

                                               

زہریلاپن

زہریلاپن کسی کیمیاوی مادے یا دیگر مادوں کے آمیزوں کی اس صلاحیت کو کہا جاتا ہے جس سے کسی جان دار شے کو ضرر پہنچ سکتا ہے۔ یہ زہریلاپن کا اطلاق کسی مکمل جان دار پر ہو سکتا ہے جیسے کہ جانور، جراثیم یا درخت۔ اس کے علاوہ کسی مخصوص عنصر کے لیے مضرت کا بھی حساب لیا جا سکتا ہے، جیسے کہ کوئی مادہ انسانی گردے یا دل کے لیے نقصان دہ ہو، اگر چیکہ دیگر اعضا کے لیے راست طور پر مضر نہ ہو۔

زمین
                                     

ⓘ زمین

اگر آپ کسی اور صفحہ کی تلاش میں ہیں تو دیکھیں زمین

زمین نظام شمسی کا وہ واحد سیارہ ہے جہاں پر زندگی موجود ہے۔ پانی زمین کی 3­ / ­2 سطح کو ڈھکے ہوئے ہے۔ زمین کی بیرونی سطح پہاڑوں، ریت اور مٹی کی بنی ہوئی ہے۔ پہاڑ زمین کی سطح کا توازن برقرار رکھنے کے لیے بہت ضروری ہیں۔ اگر زمین کو خلا سے دیکھا جائے تو ہمیں سفید رنگ کے بڑے نشان نظر آئیں گے۔ یہ پانی سے بھرے بادل ہیں جو زمین کی فضا میں ہر وقت موجود رہتے ہیں۔ پچھلے چند سالوں سے ان بادلوں کی تعداد میں کمی آئی ہے جس کا اثر زمین کی فضا کو پڑا ہے۔ زمین کا صرف ایک چاند ہے۔ زمین کا شمالی نصف کرہ زیادہ آباد ہے جبکہ جنوبی نصف کرہ میں سمندروں کی تعداد زیادہ اور خشکی کم ہونے کی وجہ سے کم آبادی ہے، اِس کے علاوہ اور کئی وجوہات ہیں جیسے پچھلے دور میں اُن علاقوں کا کم جاننا وغیرہ۔ قطب شمالی اور قطب جنوبی پر چھ ماہ کا دن اور چھ ماہ کی رات رہتی ہے۔ عام دن اور رات کا دورانیہ چوبیس گھنٹے کا ہوتا ہے۔

                                     

1. تاریخ وار ترتیب

نظام شمسی میں پائے جانے والے قدیم ترین مواد کی تاریخ 4.5672 ± 0.0006 بلین سال قدیم ہے۔ آغاز میں زمین پگھلی ہوئی حالت میں تھی لیکن وقت گزرنے کے ساتھ زمین کی فضا میں پانی جمع ہونا شروع ہو گیا اور اس کی سطح ٹھنڈی ہو کر ایک قرشcrust کی شکل اختیار کر گئی۔ اس کے کچھ عرصہ بعد ہی چاند کی تشکیل ہوئی۔ سائنسدانوں کا خیال ہے کہ مریخ کی جسامت کا ایک جسم تھیا Theia، جس کی کمیت زمین کا دسواں حصہ تھی، زمین سے ٹکرایا اور اس تصادم کے نتیجے میں چاند کا وجود عمل میں آیا۔ اس جسم کا کچھ حصہ زمین کے ساتھ مدغم ہو گیا، کچھ حصہ الگ ہو کر خلا میں دور نکل گیا، اور کچھ الگ ہونے والا حصہ زمین کی ثقلی گرفت میں آگیا جس سے چاند کی تشکیل ہوئی۔

پگھلے ہوئے مادے سے گیسی اخراج اور آتش فشانی کے عمل سے زمین پر ابتدائی کرہ ہوا ظہور پذیر ہوا۔ آبی بخارات نے ٹھنڈا ہو کر مائع شکل اختیار کی اور اس طرح سمندروں کی تشکیل ہوئی۔ مزید پانی دمدار سیاروں کے ٹکرانے سے زمین پر پہنچا۔ اونچے درجہ حرارت پر ہونے والے کیمیائی عوامل سے ایک self replicating سالمہ molecule تقریباً 4 ارب سال قبل وجود میں آیا، اور اس کے تقریباً 50 کروڑ سال کے بعد زمین پر موجود تمام حیات کا جد امجد پیدا ہوا۔

ضیائی تالیف کے ارتقاء کے بعد زمین پر موجود حیات سورج کی توانائی کو براہ راست استعمال کرنے کے قابل ہو گئی۔ ضیائی تالیف سے پیدا ہونے والی آکسیجن فضاء میں جمع ہونا شروع ہو گئی اور کرہ ہوا کے بالائی حصے میں یہی آکسیجن اوزون ozone میں تبدیل ہونا شروع ہو گئی۔ چھوٹے خلیوں کے بڑے خلیوں میں ادغام سے پیچیدہ خلیوں کی تشکیل ہوئی جنھیں eukaryotes کہا جاتا ہے۔ آہستہ یک خلوی جانداروں کی بستیاں بڑی سے بڑی ہوتی گئیں، ان بستیوں میں خلیوں کا ایک دوسرے پر انحصار بڑھتا چلا گیا اور خلیے مختلف کاموں کے لیے مخصوص ہوتے چلے گئے۔ اس طرح کثیر خلوی جانداروں کا ارتقاء ہوا۔ زمین کی بالائی فضا میں پیدا ہونے والی اوزون ozone نے آہستہ زمین کے گرد ایک حفاظتی حصار قائم کر لیا اور سورج کی بالائے بنفشی شعاعوں ultra violet rays کو زمین تک پہنچنے سے روک کر پوری زمین کو زندگی کے لئیے محفوظ بنا دیا۔ اس کے بعد زندگی زمین پر پوری طرح پھیل گئی۔

  • زمین کی عمر
  • اگرچہ کائنات کی عمر کے بارے میں سائنسدان متفق نہیں ہیں ۔ لیکن زمین کی عمر کے بارے میں ان کا خیال ہے کہ آج سے پانچ ارب سال پہلے گیس اور غبار کا ایک وسیع و عریض بادل کشش ثقل کے

انہدام کے باعث ٹکروں میں تقسیم ہو گیا سورج جو مرکز میں واقع تھا سب سے زیادہ گیس اس نے اپنے پاس رکھی ۔ باقی ماندہ گیس سے دوسرے کئی گیس کے گولے بن گئے ۔ گیس اور غبار کا یہ بادل ٹھندا تھا اور اس سے بننے والے گولے بھی ٹھندے تھے ۔ سورج ستارہ بن گیا اور دوسرے گولے سیارے ۔ زمین انہی میں سے ایک گولہ ہے ۔ سورج میں سارے نظام شمسی کا 99٪ فیصد مادہ مجتمع ہے ۔ مادے کی کثرت اور گنجانی کی وجہ سے اس میں حرارت اور روشنی ہے ۔ باقی ماندہ ایک فی صدی سے تمام سیارے جو نظام شمسی کا حصہ ہے بنے ۔ نظام شمسی کے یہ گولے جوں سکڑتے گئے ان میں حرارت پیدا ہونے لگی ۔ سورج میں زیادہ مادہ ہونے کی وجہ سے اس شدید سمٹاؤ کی وجہ سے اٹمی عمل اور رد عمل شروع ہوا اور اٹمی دھماکے شروع ہوئے ، جس سے شدید ایٹمی دھماکے ہوئے ، جن سے شدید حرارت پیدا ہوئی ۔ زمین میں بھی ان ہی اصولوںکے تحت حرارت پیدا ہوئی ۔ حرارت سے مادہ کا جو حصہ بخارات بن کر اڑا فضا کے بالائی حصوں کی وجہ سے بارش بن کر برسا ۔ ہزاروں سال یہ بارش برستی رہی ۔ ابتدا میں تو بارش کی بوندیں زمین تک پہنچتی بھی نہیں تھیں ۔ بلکہ یہ راستہ میں دوبارہ بخارات بن کر اڑ جاتی تھیں ۔ مگر لاکھوں کروڑں سال کے عمل سے زمین ٹھنڈی ہوگئی ۔ اس کی چٹانیں بھی صاف ہوئیں خشکی بھی بنی اور سمندر وجود میں آئے۔

                                     

2. ساخت اور ڈھانچہ

زمین قطبین پر شلجم کی طرح تقریباً چپٹی گول شکل میں ہے۔ زمین کے گھومنے سے اس میں مرکز گریز اثرات شامل ہوجاتے ہیں۔ جس کے باعث یہ خط استوا کے قریب تھوڑی ابھری ہوئی ہے اور اس کے قطبین یا پولز قدرے چپٹے ہیں۔ ان مرکز گریز اثرات ہی کی وجہ سے زمین کے اندرونی مرکز سے سطح کا فاصلہ خط استوا کے مقابلے میں قطبین پر 33 فیصد کم ہے۔ یعنی مرکز سے جتنا فاصلہ خط استوا کے مقامات پر زمین کی سطح تک ہے مرکز سے قطبین کی سطح کا فاصلہ اس سے لگ بھگ ایک تہائی کم ہے۔

                                               

گھماؤں

گھماؤں زمین کی پیمائش کا دیسی پیمانہ ہے۔ ایک گھماؤں 2 بیگھے یا 8 کنال یا 1440 مربع کرم یا ایک ایکڑ کے برابر ہوتا ہے۔گھماؤں کا لفظی مطلب چکر یا پھیر ہے۔ایک گھماؤں سے مراد زمین کی وہ مقدار جسے بیلوں کی ایک جوٹ دن بھر میں جوت ڈالتی ہے۔

طالبیہ
                                               

طالبیہ

طالبیہ) مغربی یروشلم میں ایک اعلیٰ درجے کا محلہ ہے۔ یہ 1920ء اور 1930ء کی دہائی میں یروشلم کے یروشلمی راسخ الاعتقاد کلیسیا سے خریدی گئی زمین پر تعمیر کیا گیا۔ ابتدائی بیشتر رہائشی مشرق وسطی کے متمول مسیحی عرب تھے جنھوں نے نشاۃ ثانیہ میں خوبصورت گھر بنائے۔

                                               

میگی اینڈ دی فیروئسس بیسٹ

میگھی نامی ایک 5 سالہ بچی نے ایک خیالی زمین تیار کی ہے جہاں وہ اور اس کے پسندیدہ کھلونے ، ہیملٹن ہاکس اور فیروکیئس جانور ، کھیل سکتے ہیں اور مہم جوئی کر سکتے ہیں۔ فیروئسس جانور حیوان کے سوا کچھ بھی نہیں ہے ، حالانکہ وہ بڑا ہے ، اس کے سر پر سرخ دھبے اور تین سینگ ہیں۔

Free and no ads
no need to download or install

Pino - logical board game which is based on tactics and strategy. In general this is a remix of chess, checkers and corners. The game develops imagination, concentration, teaches how to solve tasks, plan their own actions and of course to think logically. It does not matter how much pieces you have, the main thing is how they are placement!

online intellectual game →